وصف

زیرنظرمقالہ میں یہ ثابت کیا گیا ہے کہ تعددا زواج ایک جائزومباح امرہے جسکوشریعت نے چند مصالح کے پیش نظرعورتوں کے درمیاں عدل ومساوات قائم رکھنے کی شرط کے ساتہ مشروع قراردیا ہے, نیزمسیحی کلیسا کی جانب سے تعدد ازواج کے سلسلے میں اسلام کے خلاف پھیلائے گئے پروپیگنڈے کا پردہ فاش کرکے اسکا رد کیا گیا ہے اوریہ ثابت کیا گیا ہے کہ تعددازواج کا نظام اسلام کے علاوہ دیگرشریعتوں میں موجود تھا گرچہ اسکی کوئی حد مقرر نہ تھی, اوراسلامی تعدد ازواج کے نظام کوخود موجودہ دورکے انصاف پسند مغربی دانشوربھی اعترا ف کرنے کے ساتہ پوروپی ممالک میں نا فذ کرنے کا مطالبہ کرتے ہیں.

فیڈ بیک