• PDF

    زیر نظر رسالہ میں مولانا کفایت اللہ سنابلی ۔حفظہ اللہ۔ نےکتاب وسنت کی روشن دلائل،جمہورسلف صالحین،ائمہ عظام ،مستند علمائے کرام ومفتیان عظام کے اقوال وفتاوے سے یہ ثابت کیا ہے کہ قربانی کے کل چاردن ہیں۔اوراس سلسلے میں تین دن کے قائلین کی تمام دلائل کا علمی محاکمہ کرکےاسے کمزوروغیرحجّت بتایا ہے۔ایام قربانی کے موضوع پرنہایت ہی تحقیقی وتفصیلی رسالہ ہے جوہرفرد اورہرلائبریری کی خاص ضرورت ہے۔

  • PDF

    ماہ ربیع الاوّل اور عید میلاد: زیرنظررسالہ میں مولانا ابوالفوزان کفایت اللہ سنابلی حفظہ اللہ نے عید میلاد کی تاریخ اورفاطمی خلفاء کی حقیقت کے حوالے سے گفتگو کرکے عید میلاد النبی صلی اللہ علیہ وسلم کے دلائل اوراس سے متعلقہ شبہات کا علمی وتحقیقی جائزہ لے کران کامسکت جواب دیا ہے۔

  • PDF

    صحیح احادیث کے مطابق رکعاتِ تراویح کی مسنون تعداد آٹھ ہے ۔مسنون تعداد کا مطلب وہ تعداد ہےجو اللہ کے نبی ﷺ سے بسند صحیح ثابت ہے ۔ رکعات تراویح کی مسنون تعداد اوررکعات تراویح کی اختیاری تعداد میں فرق ہے ۔ مسنون تعداد کا مطلب یہ ہے کہ جو تعداد اللہ کےنبی ﷺ سے ثابت ہے او راختیاری تعداد کا مطلب یہ ہے کہ وہ تعداد جو بعض امتیوں نے اپنی طرف سے اپنے لیے منتخب کی ہے یہ سمجھتے ہوئے کہ یہ ایک نفل نماز ہے اس لیے جتنی رکعات چاہیں پڑھ سکتے ہیں۔ زیر نظر کتاب ’’مسنون رکعات تراویح دلائل کی روشنی میں ‘‘مولانا ابو الفوزان کفایت اللہ السنابلی حفظہ اللہ کی تصنیف لطيف ہے جس میں انہو ں نے رکعات تراویح کے سلسلے میں وارد احادیث کی مکمل تحقیق پیش کرتے ہوئے ثابت کیا ہے کہ تعداد رکعات تراویج بشمول وتر کل گیارہ رکعات ہیں اور صحابہ کرام رضی اللہ عنہم کا عمل بھی اسی پر تھا نبی کریم ﷺ کا رمضان او رغیر رمضان میں رات کا قیام بالعموم گیارہ رکعات سے زیادہ نہیں ہوتا تھا اور حضرت جابررضی اللہ عنہ کی روایت کے مطابق رسول اللہ ﷺ نے صحابہ کرام رضی اللہ عنہم کوتین رات جو نماز پڑھائی وہ گیارہ رکعات ہی تھیں او ر حضرت عمر رضی اللہ عنہ نے بھی مدینے کے قاریوں کو گیارہ رکعات پڑھانے کا حکم دیاتھا اور گیارہ رکعات پڑھنا ہی مسنون عمل ہے ۔امیر المومنین حضر ت عمر بن خطاب ، حضرت علی بن ابی طالب، حضرت ابی بن کعب اور حضرت عبد اللہ بن مسعود رضی اللہ عنہم سے 20 رکعات قیام اللیل کی تمام روایات سنداً ضعیف ہیں ۔

فیڈ بیک