علمی زمرے

  • PDF

    سوال: اگر میں شرابی ہوں ،پھر بھی میں نیت کر لوں کہ 9 اور 10 محرّم کے روزے رکھوں گا تو کیا مجھے ان روزوں کا ثواب ملے گا ،اور اگر ملے گا تو کیا میرے سابقہ اور آئندہ سال کے گناہ معاف ہو جائیں گے ؟

  • PDF

    زیرنظر کتاب میں گناہوں کی دوقسمیں صغیرہ وکبیرہ کا تذکرہ کرکے عقائد،عبادات،اخلاق،معاملات،امارت وزینت وغیرہ سے متعلق کبیرہ گناہ کو ذکرکرکے ان سے بچنے کا شرعی طریقہ بیان کیا گیا ہے،اوروہ توبہ نصوح ہے جس سے ان گناہوں کا کفارہ ہوسکتا ہے۔

  • video-shot

    MP4

    اس ویڈیو کلپ میں یہ بیان کیا گیا ہے کہ حقیقی مفلس کون ہے ؟

  • video-shot

    MP4

    غیبت کی جائز صورتیں

  • video-shot

    MP4

    چغل خوری کی قباحت

  • video-shot

    MP4

    گناہ کبیرہ میں سے سنگین گناہ

  • video-shot

    MP4

    سگریٹ نوشی کے طبی نقصانات

  • video-shot

    MP4

    سگریٹ نوشی سے چھٹکارے کی راہیں

  • video-shot

    MP4

    سگریٹ نوشی کے دینی نقصانات

  • video-shot

    PDF

    حقیقی محتاج کون؟: اس پمفلٹ میں روز قیامت مفلس قراردئے جانے والے لوگوں کا تذکرہ ہے۔

  • video-shot

    MP4

    زیر نظر ویڈیو میں شیخ حافظ عبد العظیم عمری مدنی حفظہ اللہ نے ظلم کی تعریف، ظلم کی شناعت وقباحت اور ظالم کے دنیا وآخرت میں خطرناک انجام کو کتاب وسنت اور سلف صالحین کے واقعات کی روشنی میں تفصیل سے بیان کیا ہے، نہایت ہی موثر و وقیع خطاب ہے ضرور مشاہدہ فرمائیں۔

  • PDF

    ميرى عمر چاليس برس ہو چكى ہے اور ميں دس برس سے شادى شدہ ہوں اور بيوى كے اعضاء تناسليہ ميں پرابلم كى وجہ سے اب تك كوئى اولاد پيدا نہيں ہوئى، ہم نے بہت سارے ڈاكٹر حضرات سے رابطہ كيا اور بہت علاج كيا ہے ليكن كوئى فائدہ نہيں ہوا، اب ميرے گھر والے مجھ پر دوسرى شادى كرنے كا دباؤ ڈال رہے ہيں اور ميں بھى اس سوچ پر مطمئن ہوں، ليكن اپنى بيوى كے دل كو زخمى نہيں كرنا چاہتا، كيونكہ اس نے دوسرى شادى كى سوچ رد كر دى ہے اور شادى كى صورت ميں خود كشى كرنے كى دھمكى دى ہے، برائے مہربانى مجھے راہنمائى كريں كہ مجھے كيا كرنا چاہيے ؟

  • PDF

    ميں آپ كے سامنے اپنى مشكل ركھنا چاہتى ہوں مجھے اميد ہے كہ اللہ سبحانہ و تعالى مشكل كا كوئى حل نكالےگا: ميں بھى ايك لڑكى ہوں جس طرح دوسرى لڑكياں اس عمر ميں محبت كا شكار ہوتى ہيں ميں بھى شريف قسم كى محبت كا شكار رہى ہوں، اس طرح نوجوانوں كے ساتھ بات چيت شروع كى ، بہر حال جس نوجوان كے ساتھ وہ اس وقت بات چيت كرتى اور تعلق ركھتى ہے وہ لڑكا اس سے عشق كے درجہ كى محبت ركھتا ہے، حتى كہ اس نے لڑكى كے گھر والوں سے اس كا رشتہ طلب كيا ليكن گھر والوں نے نشئى ہونے كى بنا پر اس نوجوان كا رشتہ قبول نہ كيا. ليكن نوجوان كہتا ہے كہ شادى ہوتے ہى وہ نشہ چھوڑ دے گا، شادى كا انكار ہونے كے بعد اس نوجوان نے كئى ايك بار خود كشى كرنے كى كوشش كى، حتى كہ اس نوجوان كى والدہ نے لڑكى سے رابطہ كر كے بتايا كہ وہ لڑكى اس كے بيٹے كے قتل كا سبب بن رہى ہے. ليكن اب وہ لڑكى اس لڑكے كو پسند نہيں كرتى.. كيونكہ وہ اسے پاگل اور مجنون سمجھتى ہے، ايك اور نوجوان كا رشتہ آيا ہے اور لڑكى نے يہ رشتہ قبول كر ليا، ليكن جب پہلے نوجوان كو علم ہوا تو وہ آ كر كہنے لگا: اب وہ اپنے آپ كو نہيں بلكہ تجھے يعنى لڑكى كو قتل كريگا، اور وہ كہتى ہے كہ وہ نوجوان كچھ بھى كر سكتا ہے تا كہ كسى اور سے شادى نہ كرے. ميرا سوال يہ ہے كہ: اب اس لڑكى كو كيا كرنا چاہيے، كيا وہ كسى دوسرے نوجوان كا رشتہ قبول كر لے يا كيا كرے، برائے مہربانى آپ سوال كا جواب دے كر عند اللہ ماجور ہوں.

  • PDF

    دينى امور كا التزام اور نفل و نوافل كا خيال ركھنے، اور حسب استطاعت اللہ تعالى كا تقوى اختيار كرنے والا شخص بچپن سے ہى ايك بيمارى كا شكار ہے، كہ وہ عورتوں جيسا لباس پہن كر اپنى خواہش پورى كرنے كا عادى ہے، كيا وہ اس فعل كى بنا پر گنہگار ہے ؟ دين كا التزام كرنے كى بنا پر بالفعل وہ اس بيمارى سے رك گيا، ليكن ابھى تك اس كى سوچ عورتوں كے ماتحت ہے اور ان سے مشابہت اختيار كرنے كے ساتھ منى يا مذى خارج ہونے كا امكان بھى ہے، تو كيا اس سے گناہ ہو گا ؟ اور كيا بغير انزال كے صرف افكار و سوچ سے بھى گناہ ہوتا ہے ؟ اور اگر اس كا حل شادى ہے تو كيا وہ اپنى بيوى كو بتا دے ، يا اگر بيوى موافق ہو تو كيا اس كے ساتھ مشابہت وغيرہ كر سكتا ہے ؟ آپ سے گزارش ہے كہ تفصيلى جواب ديں، اللہ كى قسم كتنى بار وہ اس سے توبہ كر چكا ہے، ليكن اس كا نفس پھر غالب آ جاتا ہے، اور غالبا وہ شہوت اس ميں صرف كر رہا ہے، ہميں معلومات فراہم كريں، اللہ كى قسم مجھے اپنے دين كا خطرہ پڑ گيا ہے.

  • PDF

    ميرى خالہ كى بيٹى فوت ہو چكى ہے، اور زيادہ احتمال اور واضح يہى ہوتا ہے كہ اس نے خود كشى كى ہے، اس ليے خود كشى كرنے والے كا حكم كيا ہے؟ اور اللہ تعالى كے ہاں اس كى حالت كيا ہے ؟ اور اس سے كمى كرنے كے ليے والدين كو كيا كرنا چاہيے ؟

  • PDF

    بچوں كے پاركوں ميں جانے كا حكم كيا ہے؛ كيونہ وہاں اكثر كھيلنے والى اشياء جانوروں كى شكل ( گھوڑا، بندر ) ميں ہوتے ہيں. اور بعض كھيلوں پر بھى جانوروں كے مجسمے ہوتے ہيں تو كيا يہ شرعى طور پر حرام مجسموں ميں شمار ہونگے تو اس كے نتيجہ ميں ان كھيلوں كے پارك ميں جانا جائز نہيں ہوگا ؟

  • video-shot

    غيبت اردو

    MP4

    زیر نظر ویڈیو میں غیبت کا مفہوم اور معاشرہ میں اسکی خطرناکی کا اختصار کے ساتھ تذکرہ کیا گیا ہے۔

  • PDF

    قارئین کرام! ضُعفِ ایمان ، بُعد از اسلام ، تقلید مغرب، بے خدا تہذیبِ فرنگ اور شُتربے مہار میڈیا کی یلغار کے نتیجے میں مسلم معاشرے میں بھی ایسےبکثرت امور وافعال اور اشیاء واعمال نہ صرف رائج بلکہ جڑیں پکڑچکے ہیں ،جو نہ صرف ناجائز وممنوع یا مکروہ کہے جانے کے لائق ہیں، بلکہ وہ صریحاً حرام ہیں ۔اور لوگوں کی انکے بارے میں لاپرواہی کا یہ عالَم ہے کہ انتہائی لا ابالی پن سے بے محابا ان کا ارتکاب کیا جاتا ہے ،جیسے کہ وہ معمولی صغیرہ یا ہلکے پھلکے گناہ بھی نہیں ،بلکہ مباحات ہوں ، جبکہ وہ حرام وکبیرہ اور انتہائی خطرناک ومہلک ہیں۔ ان ہلاکت خیز گناہوں کی ایک معتد بہ تعداد کا تذکرہ معروف اسلامی اسکالر شیخ محمد بن صالح المنجد-حفظه الله- نے اپنی مختصر مگرجامع ومانع کتاب[محرَّمات استهان بها الناس- يجب الحذر منها- ] میں اپنے مخصوص علمی اور بڑے دردمندانہ انداز سے کیا ہے۔ کتاب کی افادیت کے پیش نظر اسے اردوزبان میں منتقلی کا کام محترمہ شکیلہ قمر-حفظہا اللہ -نے سر انجام دیا ہے،اور نظرثانی ،تنقیح وتہذیب اورمفید حواشی وتعلیق سے اسےابوعدنان محمد منیرقمر –حفظہ اللہ- نے زینت بخشا ہے۔

  • PDF

    بے شک گانا بجانا اور قوالی کا سننا حرام ہے اور دل میں نفاق وذکرالہی سے دوری کا سبب ہے اسی لئے شریعت نے اسے حرام قراردیا ہے اور نبی صلى اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:\” میرى امت میں سے ایسے لوگ ضرور پیدا ہونگے جو شرمگاہ [زنا] ’ ریشم ’ شراب اور گانا وموسیقی کو حلال کرلیں گے\”- کتاب مذکور میں اسی سے متعلق کتاب وسنت کی روشنی میں تفصیلی گفتگو کی گئی ہے. نہایت ہی مفید کتاب ہے ضرور مطالعہ کریں اللہ سے دعا ہے کہ ہم سب کو اس مرض سے محفوظ رکھے آمین.

  • PDF

    کبیرہ گناہ:یہ ایسے بڑے گناہ ہیں جو صرف سچی توبہ سے ہی معاف ہوسکتے ہیں.اگرگناہ کسی انسان کے حق سے متعلق نہیں ہے تو،توبہ کی تین شرائط ہیں:1-جس گناہ میں انسان ملّوث ہے اس سے باز آجائے 2-کئے ہوئے گناہ پرندامت وشرمندگی ہو 3-آئندہ اس گناہ کو کبھی نہ کرنے کا عزم ہو- اگرگناہ کسی انسان کے حق سے متعلق ہو تو چوتھی شرط مزید یہ عائد ہوتی ہے 4-اگرکسی انسان کا حق اسنے چھینا ہو تو اسکا حق لوٹادے ،اگروہ نہ ملے تو اسکے وارثوں کودے اوراگروہ بھی نہ ملیں تو اسکی جانب سے صدقہ وخیرات کردے ،اگرحق لوٹانے کی طاقت نہیں تو اس سے معافی مانگ لے،اگروہ نہ ملے تو اسکے حق میں دعائے مغفرت کرے-زیرنظرکتابچہ میں کبیرہ گنا ہوں کو جمع کرنے کی کوشش کی گئی ہے تاکہ لوگ ان سے بچکراللہ کی وعید سے محفوظ رہ سکیں.

صفحہ : 4 - سے : 1
فیڈ بیک