فرضي اورنفلی حج کے لیے والدین کی اجازت

مُفتی : محمد صالح

وصف

کیا کوئي شخص والدین کی اجازت کے بغیر حج کرسکتاہے ؟ اورکیا اس کا حج صحیح ہوگا ؟
اورکیا والدین کی اجازت کے بغیر علم حاصل کیا جاسکتا ہے ؟ اورکیا وہ دونوں گناہ گارہونگے ؟

Download
اس پیج کے ذمّے دار کو اپنا تبصرہ لکھیں

کامل بیان

    فرضي اورنفلی حج کے لیے والدین کی اجازت

    إذن الوالدين لحج التطوع والفريضة

    « باللغة الأردية »

    شیخ محمد صالح المنجد

    محمد صالح المنجد

    ترجمہ: اسلام سوال وجواب ویب سائٹ

    تنسیق: اسلام ہا ؤس ویب سائٹ

    ترجمة: موقع الإسلام سؤال وجواب
    تنسيق: موقع islamhouse

    2012 - 1433

    فرضي اورنفلی حج کے لیے والدین کی اجازت

    کیا کوئي شخص والدین کی اجازت کے بغیر حج کرسکتاہے ؟ اورکیا اس کا حج صحیح ہوگا ؟

    اورکیا والدین کی اجازت کے بغیر علم حاصل کیا جاسکتا ہے ؟ اورکیا وہ دونوں گناہ گارہونگے ؟

    الحمد للہ

    والدین کوحق حاصل ہے کہ وہ نفلی حج سے روک سکتے ہیں اورایسا کرنے سے وہ گنہگارنہيں ہونگے ، لیکن والدین کویہ حق حاصل نہیں کہ وہ فرضی حج کرنے سے منع کریں اورفرضی حج کی ادائيگي سے منع کرنے پروہ گنہگارہونگے ۔

    لھذا جب بیٹا والدین کی اجازت کے بغیر حج ادا کرے تواس کا یہ حج مطلقا صحیح ہوگا – اگرچہ وہ نفلی حج میں گنہگار ہوگا – اوراسی طرح اسے والدین کی اجازت کے بغیر ( شرعی ) علم کے حصول کے لیے سفر کی بھی اجازت ہے ۔ .