وصف

مجھ پر منكشف ہوا كہ ميرى بيوى كے ايك نوجوان كے ساتھ عشقيہ تعلقات ہيں، ابتدا ميں تو يہ ٹيلى فونك رابطے تك ہى محدود تھے، ليكن معاملہ اس حد تك پہنچ گيا كہ ميرى بيوى نے اسے ميرى غير موجودگى ميں گھر بھى بلايا.
اب تك ميرى بيوى كو معلوم نہيں كہ مجھے ان كے تعلقات كا علم ہو چكا ہے، ميں اسے طلاق دينے كى نيت كر چكا ہوں، ميرا سوال يہ ہے كہ:
كيا مجھے شرعى طور پر حق حاصل ہے كہ ميں اسے ديا ہوا مہر واپس لے لوں، اور بيوى كو شرعى عدالت ميں اسٹام ميں تحرير كردہ باقى مانندہ مہر سے بھى دستبردار ہونے پر مجبور كروں ؟
ميرا دوسرا سوال يہ ہے كہ:
ميرى بيوى نے ميرى كئى بار كچھ رقم بھى چورى كى ہے، اس كا انكشاف اس كى آخرى چورى كے بعد ہوا ہے، تو كيا مجھے حق حاصل ہے كہ ميں اس كے گھر والوں سے چورى كردہ مال اور مندرجہ بالا سوال ميں بيان كيا گيا مہر واپس كرنے كا مطالبہ كروں ؟
ميرا تيسرا سوال يہ ہے كہ:
ہمارى دو بچياں ہيں بڑى بچى كى عمر ڈھائى بر ساور چھوٹى كى عمر دس ماہ ہے، اور ماہ كا دودھ بھى چھوڑ چكى ہے كيا مجھے حق حاصل ہے كہ ميں طلاق دينے كے بعد بيوى كو بچيوں كى تربيت محروم كردوں؛ كيونكہ اس نے جو كچھ كيا ہے وہ خيانت ہے ؟
بيوى كے برے اخلاق كى بنا پر ميں اپنى بچيوں كى تربيت خود كرنا چاہتا ہوں. ميرا چوتھا سوال يہ ہے كہ:
ميرى بيوى اب حاملہ ہے كيا ميں حاملہ بيوى كو طلاق دے سكتا ہوں ؟
ميرى پانچواں سوال يہ ہے كہ:
ميڈيكل رپورٹ كے مطابق اب تك حمل پورى طرح صحيح حالت ميں نہيں، اور ہو سكتا ہے حمل ضائع ہو جائے، اور اگر ايسا ہوتا ہے تو كيا مجھے طلاق دينے كے ليے ايك حيض انتظار كرنا ضرورى ہو گا، طلاق دينے كے ليے شرعى وقت كيا ہے ؟
ميرا چھٹا سوال يہ ہے كہ:
كيا ايك ہى طلاق كافى ہے يا كہ وقفہ وقفہ سے اسے تين طلاق دينا ہونگى، برائے مہربانى مجھے معلومات فراہم كريں، اللہ سبحانہ و تعالى آپ كو جزائے خير عطا فرمائے، ميں اسے طلاق دينے كے ليے آپ كے فتوى كا انتظار كرونگا ؟

فیڈ بیک